کہیں عشق سجدے میں گر گیا

کہیں عشق سجدے سے پھر گیا
 کہیں عشق درس وفا بنا
 کہیں عشق حسن وفا بنا
کہیں عشق نے سانپ سے ڈسوا دیا
کہیں عشق نے نماز کو قضا کیا
کہیں عشق سیف خدا بنا
کہیں عشق شیر خدا بنا
کہیں عشق طور پر دیدار ہے
کہیں عشق ذبح کو تیار ہے
کہیں عشق نے بہکا دیا
کہیں عشق نے شاہ مصر بنادیا
کہیں عشق آنکھوں کا نور ہے
کہیں عشق کوہ طور ہے
کہیں عشق تو ہی تو ہے
کہیں عشق اللہ ہو ہے 
 

نوٹ


"لفظ بولتے ہیں " ویب سائٹ پر شائع ہونے والی تمام نگارشات قلم کاروں کی ذاتی آراء پر مبنی ہیں۔ ادارہ کا ان سے متفق ہونا ضروری نہیں۔


ہمیں فالو کریں

گوگل پلس

فیس بک پیج لائک کریں


بذریعہ ای میل حاصل کریں